Dialogue – 56 (Red-lines)

(Am thankful to http://www.inzaar.org for the concept of this writing….)

 

“Right aur wrong ki red lines kiyya hain…?…”

“Islam right aur wrong ki red lines bohat clear bataata hai… Unfortunately hamaaray mazhabi hazraat isay ulta kar kay bataatay hein…”

“Wo kaisay…?…”

“Ye loag aik barra sa red-circle draw kartay hein… Aur hamein ya bataatay hein, kay iss se baahir kuch nahin karna… Iss kay andar andar rehna hai…Iss kay baahir sub haraam hai….”

“To..?..”

“Deen ka tareeqa bilkul ulta hai… Deen aik small sa red-circle draw karta hai…. Aur kehta hai, kay iss kay andar nahin jaana…. Baahar koi limit nahin……jo marzi karo…. Bus ye waalay kaam na karo…. Iss tarah, Deen hamein liberty deta hai………jab kay ye loag confine kartay hein…”

“Deen ki red lines kiyya hain…”

“Yeh:….”

’ اے بنی آدم! ہر عبادت کے موقع پر اپنی زینت سے آراستہ رہو اور کھاؤ اور پیو،

اوراسراف نہ کرو۔ اللہ تعالیٰ اسراف کرنے والوں کو پسند نہیں کرتا،

اے رسول ان سے کہو، کس نے اللہ کی اس زینت کو حرام کر دیا جسے اللہ نے اپنے بندوں کے لیے نکالا تھا اور کس نے خدا کی بخشی ہوئی پاک چیزیں ممنوع کر دی ہیں۔ کہو ، یہ ساری چیزیں دنیا کی زندگی میں بھی اہل ایمان کے لیے ہیں ، اور قیامت کے دن توخالصتاً انہی کے لیے ہوں گی۔ اس طرح ہم اپنی باتیں صاف صاف بیان کرتے ہیں ان لوگوں کے لیے جو علم رکھنے والے ہیں۔ اے نبی کہدو کہ میرے رب نے جو چیزیں حرام کی ہیں وہ تو یہ ہیں :

بے حیائی کے کام ، خواہ کھلے ہوں یا چھپے ،

اورحق تلفی،

اورناحق زیادتی،

اوراس بات کو حرام ٹھہرایا ہے کہ تم کسی چیز کو اللہ کا شریک بناؤ جس کی اس نے کوئی دلیل نہیں اتاری،

اوریہ کہ تم اللہ کے نام پر کوئی ایسی بات کہوجس کا تمھیں علم نہ ہو۔‘‘

(الاعراف7 :32-33)

Advertisements

6 thoughts on “Dialogue – 56 (Red-lines)

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s