Umair’s Tagline – 8

عجیب تھا گفتگو کا عالم

سوال کوئ جواب آنکھیں

Advertisements

3 thoughts on “Umair’s Tagline – 8

  1. گُلاب آنکھیــں شـراب آنکھیــں
    یہی تو ہیں لاجـواب آنکھیــں
    انہیں میں اُلفـت اِنہیں میں نفـرت
    سـوال آنکھیــں عـذاب آنکھیــں
    کبھی نظر میں بلا کی شـوخـی
    کبھی سـراپا حجـاب آنکھیــں
    کبھی چھپـاتی ہیـں راز دِل کــے
    کبھی ہیـں دل کی کتـاب آنکھیــں
    کسی نـے دیکھیں تو جھیـل جیسی
    کسی نے پائیـں شـراب آنکھیــں
    وہ آئے تو لـوگ مجھ سے بولــے
    حضـور آنکھیــں جنـاب آنکھیـں
    عجب تھــا یہ گفتـگو کا عالــم
    سـوال کوئـی ، جـواب آنکھیــں
    یہ مست مست بـے مثال آنکھیــں
    نشے سے ہر دم نڈھـال آنکھیــں
    اُٹھیں تو ہـوش و حـواس چھینیـں
    جُھکیں تو کر دیں کمـال آنکھیــں
    کوئی تو ہـے ان کے کـراہ کا طـالب
    کسی کا شـوق وصـال ، آنکھیــں
    نہ یوں جلائیــں نہ یوں ستائیــں
    کریں یہ کچھ تو خیــال آنکھیــں
    ہیــں جینـے کا اک بہــانہ یارو
    یہ روح پرور جمــال آنکھیــں
    دراز پلکیــں وصـال آنکھیــں
    مصـوری کا کمـال آنکھیــں
    شــراب رب نے حــرام کر دی
    مگر کیوں رکھی حلال آنکھیــں
    ہــزاروں ان سے قتــل ہوئـے ہیــں
    خدا کے بندے سنبھـال آنکھیــں

    Like

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s