Self-Description 68

مُجھ کر پڑھتے ہیں کئی لوگ مگر

میں مُخاطب صرف تمہی سے ہوں

🙂

Advertisements

Self-Description 67

میں اپنی ذات میں کھویا تو تُجھ میں جا نِکلا
…..  تیرا وجود میری رہ گُزر میں رہتا ہے

 

Self-Description 66

دل نے کیا کر لیا مصروفِ تمنا رہ کر

ہم یہی سوچ کے فرصت میں پڑے رہتے ہیں

 

🙂

Self-Description 65

ہے شوق سفر ایسا  کہ  اِک عمر سے ہم نے
منزل بھی نہیں پائی  ….. رستہ بھی نہیں بدلا

 

Self-Description 64

ہوا کے دوش پہ رکّھے ہوئے چراغ ہیں ہم

  ! جو بُجھ  گئے تو ہوا سے شکایتیں  کیسی

 

 

 

P.S.  …. ہوا کو لِکھنا جو آ گیا ہے

🙂

Self-Description 63

پت جھڑ کی دہلیز پہ رکّھے  ، بے چہرہ پتّوں کی صُورت

ہم کو ساتھ  لئے پھرتی ہے تیرے دھیان کی تیز ہوا

Self-Description 62

کہیں میں دیر سے جاؤں تو یاد آتا ہے

کہیں میں وقت سے پہلے بھی جایا کرتا تھا