Classics – 108

39028859_371798253358536_3666983609207619584_n.jpg

Advertisements

Facts – 112

fb_img_1473235948968872170445.jpg

Facts – 111 (Pakistani awam ka nouha)

ہمارے خواب اپنے ہیں نہ غم کی ڈور اپنی ہے

لکیریں تو سنہری ہیں مگر کمزور ہاتھوں میں

ہمیں تقدیر نے موج تلاطم میں دھکیلا ہے 

ہمارا آب و دانہ لکھ دیا ہے چور ہاتھوں میں

تُو میرے سجدوں کی لاج رکھ لے شعور سجدہ نہیں ہے مجھ کو , یہ سر تِرے آستاں سے پہلے کسی کے آگے جُھکا نہیں ہے

ذرا دیکھ کے چال ستاروں کی

کوئی زائچہ کھینچ قلندرسا

کوئی ایسا جنتر منتر پڑھ

جو کر دے بخت سکندرسا

کوئی چلہ ایسا کاٹ کہ پھر

کوئی اسکی کاٹ نہ کر پائے

کوئی ایسا دے تعویزمجھے

وہ مجھ پر عاشق ہو جائے

کوئی فال نکال کرشمہ گر

مری راہ میں پھول گلاب آئیں

کوئی پانی پھونک کے دے ایسا

وہ پیئے تو میرے خواب آئیں

کوئی ایسا کالا جادو کر 

جو جگمگ کر دے میرے دن

وہ کہے مبارک جلدی آ 

اب جیا نہ جائے تیرے بن

کوئی ایسی رہ پہ ڈال مجھے

جس رہ سے وہ دلدار  ملے

کوئی تسبیح دم درود بتا

جسے پڑھوں تو میرا یار ملے

کوئی قابو کر بے قابو جن

کوئی سانپ نکال پٹاری سے 

کوئی دھاگہ کھینچ پراندے کا

کوئی منکا اِکشا دھاری سے

کوئی ایسا بول سکھا دے نا

وہ سمجھے خوش گفتارہوں میں

کوئی ایسا عمل کرا مجھ سے 

وہ جانے ، جان نثار ہوں میں

کوئی ڈھونڈھ کے وہ کستوری لا

اسے لگے میں چاند کے جیسا ہوں

جو مرضی میرے یار کی ہے

اسے لگے میں بالکل ویسا ہوں

کوئی ایسا اسمِ اعظم پڑھ

جواَشک بہا دے سجدوں میں

اور جیسے تیرا دعوی  ہے 

محبوب ہو میرے قدموں میں 

پر عامل رُک ، اک بات کہوں

یہ قدموں والی بات ہے کیا ؟

محبوب تو ہے سر آنکھوں پر

مجھ پتھر کی اوقات ہے کیا

اور عامل سُن یہ کام بدل

یہ کام بہت نقصان کا ہے

سب دھاگے اسکے ہاتھ میں ہیں

“جو مالِک کُل جہان کا ہے”

 

 

Courtesy: Faqeera

روز سوچا ہے بھُول جاؤں تُجھے ، روز یہ بات بھُول جاتا ہوں

Quotefancy-24263-3840x2160.jpg

Classics – 107

بڑا گھاٹے کا سودا ہے صدا یہ سانس لینا بھی

بڑھے ہے عُمر جوں جوں ، زندگی کم ہوتی جاتی ہے